<< Previous Next >>

ملاحظة رقم 16 – أنواع الأدلة: الصور

أهلاً وسهلاً بكِ يا عزيزتي في هذا الملاحظة السادسة عشر من إحدى وعشرون ملاحظة! لقد تكلمنا في الملاحظة السابقة عن كيفية تقديم الملفات الصوتية كنوع من الأدلة. في هذه الملاحظة سوف نتكلم عن كيفية تقديم الصور كنوع من الأدلة. بإمكانكِ فعل ذلك.

مثل الملفات الصوتية, تعد الصور مهمة للغاية لقضيتكِ ولكن مع محتوى. ماهي الأنواع المختلفة من الصور التي يمكن أن تكون جزء من الأدلة التي يمكن أن تقدميها؟

  • صور للإصابات أو الجروح – هذه الصور سوف تبرهن لماذا تشعرين بالتهديد.
    الصور التي قد تظهر شخصية المعتدي العنيفة.

  • لقطات من أي رسائل بريد إلكتروني , رسائل نصية تظهر سوء المعاملة التي تعرضتِ لها من قبل المعتدي.

  • صور لمحيطكِ إذا كان المعتدي عليكِ يحرمكِ من الحاجات الأساسية أو إذا كنت مقيدة.

  • صور لأي أدوات استخدمت خلال العنف او سوء المعاملة.

  • صور المستندات التي لا يمكنكِ الحصول عليها بشكل دائم ، مثل رخصة زواجكِ ، أو حتى صورة لحفل الزفاف الخاص بكِ والتي يمكن أن تثبت علاقتك مع المعتدي.

  • عند توثيق الإصابات ، التقطي عدة صور لنفس الإصابة – صورة قريبة للإصابة أو الكدمة ، وصورة لكامل الجسم حتى يمكن إثبات أن الإصابة تخصكِ. حتى لو كانت الإصابة تبدو صغيرة ، قومي بتوثيقها. لا تقلقي بشأن محاولة المعتدي على الادعاء بأن الإصابة كانت بسبب عمل قمتي به أو بشكل طبيعي. في معظم الأحيان ، يمكن للأطباء تحديد الطبيعة الدقيقة وسبب الإصابة ، حتى من خلال الصور فقط.

    كيف تقدمين الصور كنوع من الأدلة؟

  • ملف للصور (فعلي او رقمي).

  • عدد كل من الصور.

  • تاريخ ووقت التقاط الصور.

  • نظمي مجموعة الصور وفقا للأنواع. هل هي لقطة للشاشة؟ أو صورة للإصابة الخاصة بك؟

  • أرفقي ملاحظة تشرح محتوى الصور - على غرار تقديم الأدلة الصوتية.

مثل الأدلة الصوتية ، كوني حذرة جداً في كيفية تخزين الصور الخاصة بكِ للتأكد من أن المعتدي لن يعثر عليها. يمكنكِ طباعة نسخ متعددة والاحتفاظ بها في مكان آمن. من المهم ألا يجدها المعتدي عليكِ.

تذكري: لا تقلقي بشأن مدى فائدة الصورة. لا يضر أبدًا إلتقاط أكبر عدد ممكن من الصور.

سلوك: قومي بفرز الصور التي لديكِ بالفعل وإبدائي في كتابة ما تحتويه الصور. هذا يمكن أن يكون عمل منهك ، لذلك خذي وقتكِ.

التالي: سوف نتحدث عن الأدلة على شكل فيديوهات.

ولكن لا تنسي: أنت ذات قيمة. أنتِ قوية. ويمكنكِ القيام بذلك.

أصدقائكِ في سول ميديسن (طب الروح).

Note 16 - Evidence type: Pictures

Hello and welcome to lesson 16 of 21! In the last lesson, you learnt how to present audio files as evidence. In this lesson, you will learn about presenting pictures as evidence. You can do this!

Like audio files, pictures are a very important asset for your case but with context. What are the different types of pictures that can be your evidence?

  • Pictures of injuries or wounds - why you feel threatened
  • Pictures that may depict your abuser’s violent character
  • Screenshots of any emails, texts and messages that depict your abuse
  • Pictures of your environment if your abuser is depriving you of basic facilities or if you are being confined
  • Pictures of any tools used for abuse
  • Pictures of documents you cannot get hold of permanently, like your marriage license, or even a photo of your wedding that can prove your relationship with your abuser.

When documenting injuries, take several pictures of the same injury - a close up of the injury or bruise, and a photo of your entire body so that it can be proven that the injury is yours. Even if an injury seems small, document it. Do not worry about your abuser trying to claim that the injury was caused by you or naturally. Most of the time, doctors can determine the exact nature and cause of an injury, even by looking just at its photo.

How to present pictures as evidence?

  • Picture file (physical or digital - in an USB)
  • Number of each picture
  • Date and time it was taken
  • Group pictures according to types. Is it a screenshot? Or a picture of your injury?
  • Note explaining the context - similar to presenting audio evidence.

Like audio evidence, be careful about how you store your pictures to make sure your abuser doesn’t find them. You can print multiple copies and keep them in a safe place. It is important that your abuser doesn’t find them.

REMEMBER: Do not worry about how useful a picture can be. It never hurts to take as many photos as you can.

ACTION: Sort out the pictures you already have and start writing descriptions. This can be overwhelming, so take it slow.

NEXT: We will learn about video evidence.

And don’t forget: You are valuable. You are powerful. You can do this!

The Soul Medicine team

نوٹ نمبر ١٦ - شواہد کی اقسام: تصاویر

ہیلو! ٢١ نوٹس میں ١٦ نوٹ میں خوش آمدید! پچھلے نوٹ میں، ہم نے سیکھا کہ کیسے آڈیو فائلز کو شواہد کے طور پہ پیش کیا جا سکتا ہے- اس نوٹ میں، ہم سیکھیں گے کہ کیسے تصاویر کو شواہد کے طور پہ پیش کیا جا سکتا ہے- آپ یہ کر سکتے ہیں!

آڈیو فائلز کی طرح، تصاویر بھی آپ کے کیس کا اہم حصّہ بن سکتے ہیں لیکن وضاحت کے ساتھ- تصاویر کی کون سی مختلف اقسام آپ کے شواہد بن سکتے ہیں-

  • چوٹوں اور زخمو‎ں کی تصاویر - آپ کیوں ڈرا ہوا محسوس کرتے ہیں -
  • تصاویر جو آپ ابیوسر کے پر تشدّد کردار کو ظاہر کرتے ہوں-
  • ان ای میل، ٹیکسٹ اور میسیجز کے سکرین شاٹ جو آپ کے اوپر ہوتے ہوئے تشدّد کو ظاہر کرے-
  • اس ماحول کی تصاویر جس میں آپ کے ابیوسر نے آپ کو بنیادی سہولیات سے دور رکھا یا اگر آپ کو کہیں بند کر کے رکھا ہو-
  • تشدّد میں استعمال ہوئے کسی اوزار کی تصاویر-
  • ان ڈاکومنٹ کی تصاویر جن کو آپ مستقل طور پہ اپنے پاس نہیں رکھ سکتے، جیسے کہ آپ کے شادی کا لائسنس، یا آپ کی شادی کی کوئی تصویر جو آپ کے ابیوسر کے ساتھ آپ کے تعلق کو ثابت کرے-

اپنے زخموں کو ڈاکومنٹ کرتے ہوئے، ایک ہی چوٹ کی کئی تصاویر لیں - چوٹ یا نیل کی قریب سے تصویر، اور اپنے پورے جسم کی تصویر تاکہ اس بات کو ثابت کر سکیں کہ یہ چوٹ آپ کی ہی ہے- چاہے آپ کو کوئی چوٹ چھوٹی ہی کیوں نہ لگے، اسے ڈاکومنٹ کریں- اپنے ابیوسر کے کسی ایسے مطالبہ کہ آپ کو یہ چوٹ از خود لگی یا آپ نے خود کو چوٹ پہنچائی ہے، اس کی فکر نہ کریں- زیادہ تر، ڈاکٹرز چوٹ کی صرف ایک تصویر دیکھ کر بھی کسی بھی زخم کی بلکل درست نوعیت اور وجہ بتا سکتے ہیں-

تصاویر کو ثبوت کے طور پہ کیسے پیش کر سکتے ہیں؟

  • پکچر فائل (فزیکل یا ڈیجیٹل طور پہ - ایک یو -ایس -بی میں)-
  • ہر تصویر کا نمبر -
  • تصویر کس دن اور کتنے بجے کھینچی گئی ہے -
  • تصاویر کے گروپس ان کی اقسام کے مطابق- کیا یہ سکرین شاٹ ہے؟ یا آپ کی کسی چوٹ کی تصویر-
  • وضاحت کرتے ہوئے کوئی نوٹ - ویسے ہی جیسے آڈیو شواہد کے ساتھ لکھنا ہے -

آڈیو شواہد کی طرح،دھیان رکھیں کہ آپ تصاویر کو کیسے سنبھال کے رکھیں گے کہ اس آپ کے ابیوسر کو وہ نہ مل جائے- آپ ان کی دیگر کاپیاں پرنٹ کرکے انھیں کسی محفوظ جگہ پہ رکھ سکتے ہیں- یہ ضروری ہے کہ آپ کے ابیوسر کو یہ نہ ملیں-

یاد رکھیں: اس بات کی فکر نہ کریں کہ ایک تصویر کتنی فائدہ مند ہے- آپ جتنی زیادہ تصاویر لے سکتے ہیں، لیں، اس میں کوئی نقصان نہیں-

عمل: آپ کے پاس جو پہلے سے موجود تصاویر ہیں،انھیں چھانٹیں اور ان کی تفصیل لکھنا شروع کر دیں- یہ سب اگر آپ کو خود پہ غالب محسوس ہونے لگے، تو اسے آرام سے لے کے چلیں-

اس کے بعد: ہم ویڈیو شواہد کے بارے میں جانیں گے-

مت بھولیں: آپ قابلِ قدر ہیں - آپ طاقتور ہیں- آپ یہ کر سکتے ہیں!

سول میڈیسن ٹیم-

<< Previous Next >>